البرٹ آئن سٹائن سے چھ سو سال قبل الاندرونی نے کشش ثقل کی لہریں دریافت کرلیں تھیں

بغداد آشوب ، نمائندہ بوریت

بغداد کی تاریخی لائبرری سے برامد ہونے والے نادر مخطوطات کے مطابق مشہور مسلمان سائنسدان الاندرونی نے کشش ثقل کی لہریں،البرٹ آئن سٹائن سے چھ سو سال پہلے دریافت کرلیں تھیں،۔ مغربی سائنسدانوں نے ہمیشہ کی طرح الاندرونی کی اس عظیم الشان دریافت کو ایک مغربی یہودی سائنسدان کے سر ڈال دیا جو کہ ایک بین الاقوامی سازش ہے۔

andruni2

سو برس قبل مشہور سائنس دان البرٹ آئن سٹائن نے ’عمومی اضافیت‘ کے نظریے میں ان لہروں کی موجودگی کے بارے میں پیشن گوئی کی تھی، تاہم کئی دہائیوں تک جاری رہنے والی تلاش کے باوجود ایسی لہروں کی نشاندہی نہیں ہو سکی تھی۔ اسکی وجہ یہ تھی کہ تاتاریوں نے بغداد کی لاکھوں جلدوں پر مشتمل عظیم الشان لائبریری کو جلاکر راکھ کردیا تھا اور الاندرونی کی کتب کا نام و نشان نا رہا۔

andruni

  اس زمن میں نوسٹیلجیا المعروفالتوق إلي الماضي کی کمیٹی نے اقوام متحدہ کے سائنس کمیشن کے سامنے دھرنے کا اعلان کیا ہے۔ تمام محب سائنس حضرات سے شرکت کی اپیل ہے۔