پیر , نومبر 19 2018
صفحہ اول / بوریت / جاب "مانگی” نہیں جاتی، حاصل کی جاتی ہے

جاب "مانگی” نہیں جاتی، حاصل کی جاتی ہے

جاب "مانگی” نہیں جاتی، حاصل کی جاتی ہے-
ملازمت یا کام کی تلاش جیسے آپ کرتے ہیں اس سے زیادہ تلاش اور بھاگ دوڑ سیٹھ صاحبان اور چھوٹی بڑی کمپنیاں کرتی ہیں —– دونوں طرف برابر کی آگ ہوتی ہے – کوئی آپکو ملازمت کی آفر کر کے یا آپکو کوئی کام یا پروجکٹ دیکر آپ پر احسان نہیں کرتا اپنی ضرورت پوری کرتا ہے – آپ اسکا کام اچھی طرح کر کے ، وقت پر پروجکٹ ڈیلیورکر کے اتنا ہی احسان کرتے ہیں
جاب کیجئے ، کام کریں اور پروجکٹ کریں ..مگر نوکری اور غلامی نہ کریں-

وہ کیا چیزیں ہیں جو آپکو غلامی اور نوکری سے بچا سکتی ہیں ؟

خوب محنت کر کے زندگی کے کسی بھی شعبے میں بہترین مہارت پیدا کریں، صرف ڈگری اور ڈپلومے جمع کرنا کافی نہیں – تعلیم، ہنر اور تجربہ کسی کے پاس ہو تو وہ کسی کا نوکر اور غلام بننے کو کبھی تیار نہیں ہو گا …. ہاں برابری کی بنیاد پر اپنے اصولوں اور شرائیط پر کسی سے بھی کوئی ایگریمنٹ کر کے کسی خاص مدت کے لیے کسی بھی سیٹھ یا کمپنی کو اپنی خدمات بیچ سکتا ہے …

ہمارے اکثر نوجوان بنیادی باتوں کو نہیں سمجھتے اور جاب کی تلاش میں انتہائی معذرت خواہانہ رویہ اپناتے ہیں – ترس کھا کر ، یا آپکی دکھ بھری کہانی سنکر کر کوئی وقتی مدد تو کی جاسکتی ہے مگر کسی اہم شعبے کی زمہ داری آپکو نہیں دی جا سکتی –

جو لوگ اس راز کو سمجھ چکے ہیں انہوں نے طویل محنت کے بعد معاشرے میں اپنا ایک پروفائل بنایا ہوا ہے ، لوگ انکو انکے کام میں مہارت کی وجہ سے جانتے اور پہچانتے ہیں اور انھیں جاب ” تلاش ” نہیں کرنی ہوتی ہے … جاب انہیں تلاش کرتا پھرتا ہے …. بہت سارے ریکروٹر اور ہیڈ ہنٹر ایسے لوگوں سے رابطے میں رہتے ہیں اور انہیں ترغیبات دیتے رہتے ہیں کہ آپ چاہئیں تو فلاں ادارے میں آپکی ضرورت ہے –

جو محنت نہیں کرے گا … وہ مانگتا ہی رہے گے .. خوشامد ہی کرتا رہے گا …ہاں میں ہاں ملا کر، لوگوں کے آگے پیچھے پھر کر ، کسی سیاسی جماعت کا سابقہ یا لاحقہ لگا کر ، کسی تنظیم کا جھنڈا اٹھا کر اور کسی کا بغل بچہ بنکر زندگی اس امید پر گذارے گا کہ ان سے جدا ہوا یا ان کی کسی بات پر ” نا ” کہنے سے اسکی دنیا تاریک ہو سکتی ہے –

جس کا اپنا پروفائل ہو ، جس نے سالوں دن رات محنت کی ہو، کتابوں کو اوڑھنا بچھونا بنایا ہو … سینکڑوں تقریبات، خوش گپیاں اور پکنک قربان کی ہو وہ ہاں میں ہاں ملانے کو نہیں پیدا ہوا ….

عزت اور سر بلندی کا راستہ طویل جدو جہد اور سخت محنت کی پہاڑیاں عبور کرنے کے بعد ملتا ہے …. خوشامد ، چاچا ما ما کی پرچی کوئی ایک چھوٹی سی نوکری تو دلا سکتی ہے … عزت کی زندگی نہیں !!!!

About absadmin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے