جاوا اسکرپٹ فریم ورک میں پھوٹ، دونوں دھڑوں میں تصادم کا خطرہ

سیلیکون ویلی، نمائندہ بوریت

نوڈ جے ایس نامی مشہورو معروف جاوا اسکرپٹ فریم ورک کے بانیان اور دیگر تنظیمی عہدیداران میں اس فریم ورک کی تنظیم کے بارے میں اختلافات شدید نوعیت اختیار کر گئے ہیں  اور اس پر پالو آلٹو کی گلیوں میں کسی بھی وقت شدید تصادم ہو سکتا ہے۔ نوڈ جے ایس سے علیہدگی اختیار کرنے والے دھڑے نے  کے سربراہ نے کہا ہے کہ وہ جوئنٹ کے کردار سے مطمئین نہیں اورنوڈ کارکنان کے حقوق کے لئے نوڈ جے ایس حقیقی المعروف آئ او جے ایس کی بنیاد ڈالتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ  جوئنٹ میں فرد واحد  برائن کانٹرل کی حکمرانی ہے اور نوڈ کے ڈویلپرز یعنی کارکنان ہم کو منزل نہیں رہنما چاہیئے کے نعرے کے سخت خلاف ہیں۔

tri-color-node

عارضی بیت الکسپریس سے خطاب کرتے ہوئے مائکل راجرز کا کہنا تھا کہ نوڈ جے ایس فریم ورک جاوا اسکرپٹ کے کارکنوں کے پرامسز، سنگل تھریڈینگ اور معیاری حقوق کے لئے بنایا گیا تھا لیکن جوئینٹ اپنے اصل مشن سے پیچھے ہٹ گئی ہے۔ مائکل راجرز نے اپنے نئے فورک کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ نوڈ کی مین ریپازیٹری کو نو گو ایریا بنا دیا گیا جس کے بعد ہم نے فورک کرنے کا فیصلہ کیا۔  انہوں نے کہ آی او حقیقی معنوں میں نوڈ کے کارکنان کے دل کی آواز ہے اور ہم کارکنان کے حقوق ملنے تک خاموش نہیں بیٹھیں گے۔

nodejs

دونوں دھڑوں کے کارکنان پالو الٹو اور ماونٹین ویو میں موجود اسٹار بکس میں اپنے میک بک پروز کے ساتھ مورچہ بند ہیں اور گٹ ہب پر نوڈ جے ایس کی ریپازٹری اعشاریہ دس پر ہنگامی حالت نافذ کرگئی ہے۔ دونوں تنظیموں کے اراکین ایک دوسرے پر رائن ڈال جو نوڈ جے ایس کے بانی ممبران میں سے ہیں ، ان  کے منظر عام سے غائب کروانے کا الزام لگاتے رہے ہیں۔ جوئنٹ کا دھڑا آئ او کے کارکنان کو گوگل کے ٹرکوں پر آنے کا طعنہ بھی دیتا رہا ہے۔

companies-using-node-js